131

کینسر کو جڑ سے اکھاڑنے والی نئی دوا تیار

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) دوبڑی کمپنیوں کے سٹم سینٹر نے منفر دوا تیارکر لی ہے جو چھاتی ، پھیپھڑوں اور بچہ دانی کے کینسر کیخلاف تیزی سے کام کرتی ہے۔ ان دوا کے لیبارٹری تجربات جاری۔ ماہرین کاکہنا ہے کہ اگر یہ تجربات مثبت رہے تو نئی دوا بعض اقسام کے کینسر میں مبتلا لوگوں کی زندگیاں بدل سکتی ہے۔دوا پر کام کررہے ہیں جسے اس وقت پی ایف 06647020کا نام دیا گیا ہے ۔توقع ہے کہ یہ دوا کینسر کو جڑ سے اکھاڑ پھینکنے کی صلاحیت رکھتی ہے۔ یہ بالکل اسی طرح کینسر کا صفایا کرتی ہے جس طرح آپاپنے باغیچے سے غیر ضروری جڑی بوٹیاں اکھاڑ کر پھینک دیتے ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ یہ دوا چھاتی کے ٹرپل نیگیٹو کینسر، بچہ دانی کے کینسر اور پھیپھڑوں کے خلیوں کے کینسر میں مفید ہے جن کا علاج عام حالات میں بہت مشکل ہوتا ہے۔ یہ دوا اپنے تجربات کے دوران چوہوں اور بندوں پر مؤثر اور محفوظ ثابت ہوچکی ہے اور ان دنوں انسانوں پر تجربات کیے جارہے ہیں۔ماہرین کا کہنا ہے کہ چونکہ اینٹی باڈی کیساتھ کینسر کیخلاف لڑنیوالی دوا بھی شامل ہوتی ہے تو وہ کیموتھراپی کے انداز میں براہ راست کینسر پر حملہ کرتی ہے اور اْسے ختم کردیتی ہے۔ یہ دوا کیموتھراپی کی جگہ لے سکتی ہے۔ اس دوا میں پی ٹی کے نامی ایک پروٹین ہے۔ یہ پروٹین کینسر کے خلیوں میں کافی مقدار میں پایاجاتاہے۔ اس دوا کے تجربات ان مریضوں پر کیے جارہے ہیں جن پر دوسری دوائیں کار گرثابت نہیں ہوئیں تھیں۔ بچہ دانی کے کینسر کے ایک تہائی مریضوں کے نتائج مثبت رہے ہیں۔ چھاتی اور پھیپھڑوں کے مخصوص کینسر کے مریضوں پر تجربات بھی حوصلہ افزا ہیں۔

Facebook Comments
کیٹاگری میں : صحت

اپنا تبصرہ بھیجیں