85

کئی سالوں سے سڑک کی ٹوٹ پھوٹ اوردریا میں گرنے کا عمل شروع ہوچکا تھا..لیکن حکمران خواب غفلت میں سوتے رہے…خدیجہ بی بی

چترال (نمائندہ آوازچترال  ) عوامی نیشنل پارٹی خیبر پختونخوا کے نائب صدر خدیجہ بی بی نے اپر چترال کے ریشن کے مقام پر سڑک اور قیمتی زرعی زمینوں کی دریا بردگی پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے اسے پی ٹی آئی حکومت کی ناکامی قرار دیتے ہوئے مطالبہ کیا ہے کہ چترال بونی سمیت ریشن گاؤں کو دریا سے بچانے کے لئے ہنگامی بنیاد وں پر کام کیا جائے۔ ایک اخباری بیان میں انہوں نے کہاکہ گزشتہ کئی سالوں سے سڑک کی ٹوٹ پھوٹ اوردریا میں گرنے کا عمل شروع ہوچکا تھا اور عوامی وسیاسی حلقے بار بار حکومت سے اس طرف توجہ دینے اور دریا کے ساتھ حفاظتی پشتے تعمیر کرنے کا مطالبہ کرتے رہے لیکن حکمران خواب غفلت میں سوتے رہے۔ انہوں نے کہاکہ حکمرانوں کو اس وقت ہوش آئی جب دریا نے تباہی وبربادی مچادی اور سڑک کے ساتھ ریشن کے مختلف گاؤں میں زرعی زمینوں کو بھی تباہ کردیا۔ اے این پی کے رہنما نے کہاکہ حکومت نے مجرمانہ غفلت کا مظاہرہ کیا ہے جسے تقریروں کے بجائے عملی کام کرنا چاہئے جبکہ اس سال جنوری کے مہینے میں بونی روڈ کا چارج سنھبالنے کے بعد این ایچ اے والوں نے کوئی کارکردگی نہیں دیکھائی جس کے نتیجے میں اپر چترال کا ملک کے دیگر حصوں سے رابطہ منقطع ہوکر رہ گئی ہے۔ انہوں نے کہاکہ عوامی نیشنل پارٹی غریب عوام کا ترجمان جماعت ہے اور اس مسئلے کو صوبائی اسمبلی سمیت ہر فورم پر اٹھائے گی۔ درین اثناء صوبائی نائب صدر خدیجہ بی بی نے چترال کو درپیش اس سنگین مسئلے کے بارے میں اے این پی کے صوبائی صدر ایمل ولی خان کے ساتھ ملاقات کرکے انہیں تفصیلات سے آگاہ کیا۔ ایمل ولی خان نے کہاکہ وہ چترالی عوام کے ساتھ ہے اور اس مسئلے کی حل میں اپنی بھر پور کوشش کریں گے جبکہ پارٹی کے ارکان اسمبلی کے ذریعے اسے صوبائی اسمبلی کے فلور پر بھی اُجاگر کیا جائے گا۔ انہوں نے سڑک کی حفاظت میں غفلت برتنے پر پی ٹی آئی کی مذمت کی جس سے علاقے کے عوام شدید مشکلات سے دوچار ہوگئے ہیں۔

Facebook Comments