105

یارخون سے خاتون کو اغواء کرکے دروش پہنچانا پولیس کی کارکردگی پر بہت بڑا سوالیہ نشان ہے؍ عمائدین یارخون کااحتجاجی جلسے سے خطاب

مستوج(نمائندہ آوازچترال) ارندو سے تعلق رکھنے والے اغواء کاروں کا یارخون جیسے دور افتادہ وادی آکر ایک خاتون کو اغواء کرکے اپنے ساتھ دروش پہنچانا سیکیورٹی اداروں بالخصوص پولیس کی کارکردگی پر بہت بڑا سوالیہ نشان ہے۔ اغواء کاروں نے خاتون کو اپنے ساتھ لے کر بہت سارے پولیس چوکیوں کو کراس کر کے کس طرح دروش پہنچایا اس کی آزادانہ تحقیقات ہونی چاہئے ان خیالات کا اظہار عمائدین یارخون نے حقوق یارخون کے پلیٹ فارم سے منعقدہ ایک احتجاجی مظاہرے سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ عمایدین کا کہنا تھا کہ اس واقعہ کے بعد یارخون کے عوام میں خوف وہراس کی لہر دوڑ گئی ہے۔ انہوں نے مطالبہ کیا کہ جلد ازجلد مین یارخون روڈ سے باہر میراگرام نمبر2میں واقع پولیس اسٹیشن کو کھوتان لشٹ میں مین روڈ منتقل کیاجائے اس کے ساتھ ہی یہ بھی مطالبہ کیا گیا کہ سیکیورٹی ادارے بالخصوص پولیس علاقے میں آنے والے غیر متعلقہ اور مشکوک افراد پر کڑی نگاہ رکھے تاکہ آئندہ کے لئے اس قسم کا کوئی ناخوش گوار واقعہ رونما نہ ہوسکے۔ مظاہرین کا کہنا تھا کہ اگر اس ناخوش گوار واقعہ میں ملوث ملزمان کو قرار واقعی سزا نہیں دی گئی تو یہ عوام کے ساتھ بہت بڑی ناانصافی ہوگی۔مقریرین کا یہ بھی کہنا تھا کہ منشیات فروشوں اور کم عمر موٹر سائیکل سواروں کے خلاف بھی قانون کے مطابق کاروائی کی جائے اور اس سلسلہ میں عوام نے پولیس کے ساتھ بھر پور تعاون کا بھی اعادہ کیا۔مقریرین نے یوسی یارخون میں سیکیورٹی کومزیدبہتربنانے کے لئے تجاویزحکام بالاکوپیش کرتے ہوئے کہاہے کہ تھانہ یارخون لشٹ کونئی گاڑی مہیاکی جائے تاکہ اسٹاف بروقت جائے وقعہ تک آسانی سے پہنچ سکے۔بریپ سے گرین تک ایک وسیع علاقہ ہے اس علاقے کے لئے نئے تھانے کی منظوری دی جائے اوردورافتادہ علاقوں کے تمام چوکیوں کوکم ازکم موٹرسائیکل مہیاکی جائے ۔انہوں نے کہاکہ تمام چیک پوسٹوں کوفعال بنایاجائے دوران چکینگ غیرمقامی لوگوں کاعلاقے میں داخل ہونے سے پہلے شناخت تسلی بخش کیاجائے۔احتجاجی جلسے سے سابق یوسی ناظم محمدوزیر،محمدظاہرلال ،وی سی نائب ناظم سیدتعلیم شاہ،چیئرمین ایل ایس اویارخون شہزادہ ابراہم ،حاجی میراکبر،وی سی نائب ناظم نیک مراددرست اوردیگرنے خطاب کئے۔

Facebook Comments