77

محکمہ تعلیم چترال کے 320 اسامیوں کیلئے دس ہزار سے زائد امیدوارمیدان میں کود پڑے

چترال (  مائندہ آواز چترال )صوبائی حکومت کی طرف سے محکمہ ایلیمنٹری اینڈ سیکنڈری ایجوکیشن میں مختلف اسامیوں کیلئے پہلی دفعہ بے غیر پروفیشنل ڈگریوں کے حامل امیدواروں سے این ٹی ایس کے زریعے درخواستیں طلب کئے گئے ۔ جس کی وجہ سے ہزاروں امیدوار میدان میں کود پڑے ۔ تاہم جن امیدواروں کی تقرری ہوگی ان کو باقاعدہ پائیٹ یا رائیٹ ادارہ سے مطلوبہ ٹریننگ حاصل کرنا ہوگی۔محکمہ ایجوکیشن (میل و فیمل) چترال کی طرف سے مشتہر کردہ اسامیوں میں ایس ایس ٹی ،سی ٹی ، ٹی ٹی ،ڈی ایم، قاری ، قاریہ ، اے ٹی ، پی اے ٹی اور پی ٹی سی شامل تھے۔زرائع کے مطابق میل ایجوکیشن میں کل 179اسامیوں جن میں44ایس ایس ٹی ، ( 12آرٹس اور 32سائنس مضامین) ، جبکہ دیگر اسامیوں میں پی ایس ٹی 62، قاری 8، ٹی ٹی 4، اے ٹی 10، پی ای ٹی 7، ڈی ایم 2، اور سی ٹی کے 42اسامیوں کو ملاکر کل 135اسامیاں مشتہر کئے گئے تھے۔جبکہ فیمل ایجوکیشن میں ایس ایس ٹی کے 18 اسامیوں کے علاوہ پی ایس ٹی 52، قاریہ ایک ، ٹی ٹی 11، اے ٹی 7، پی ای ٹی 9، ڈی ایم4اورسی ٹی کے 39پوسٹ خالی تھے۔ جن کو ملاکر کل 141اسامیوں کیلئے دخواستیں طلب کئے گئے تھے۔ان اسامیوں کیلئے روزانہ بینکوں کے سامنے امیدواروں کی لمبی لمبی قطاریں لگی رہتی تھی۔ ذرائع کے مطابق سب سے زیادہ امیدوار حبیب بینک مین برانچ چترال میں فیس داخل کئے۔ جہاں مقررہ اخری تاریخ20دسمبر تک چار ہزار سے زائد امیدوار فیس جمع کرائے۔ جبکہ دیگر بینکوں میں بھی سینکڑوں امیدواروں کی طرف سے فیس داخل کرنے کی اطلاعات ہیں۔اسی طرح ضلع سے باہر پشاور اور اسلام آباد سمیت دیگر علاقوں سے بھی امیدواروں نے درخواستیں جمع کرنے کے مراحل سے گزرے۔دریں اثنا مختلف امیدواروں کی طرف سے یہ شکایت بھی سننے کو ملی کہ این ٹی ایس کی طرف سے چار بینکوں کے برانچوں میں درخواست فیس جمع کرنے کی ہدایت دی گئی تھی ۔ مگر بعض برانچوں نے امیدواروں کو سرے سے ہی واپس کردئیے کہ ان کے پاس یہ سہولت موجود نہیں۔ جس کی وجہ سے بہت سے امیدوار درخواست فیس مقررہ وقت میں جمع کرنے سے قاصر رہے ۔ متاثرہ امیدواروں نے متعلقہ حکام سے مذکورہ بینک برانچوں میں فیس جمع نہ کرنے کا فوری نوٹس لینے کا مطالبہ کیا ہے ۔ تاکہ آئندہ کو ئی امیدوار ان مواقع سے محروم نہ رہ سکے

Facebook Comments