تازہ ترین

چترال کے لوگوں نے چترال کو میگا پراجیکٹ دینے والی پارٹی مسلم لیگ ن کے ساتھ احسان فراموشی کی حد کردی ہے ۔ وزیر اعظم شہباز شریف اگر چترال کا دورہ کریں ۔ تو یہ ان کی شفقت ہو گی ۔..نیاز اے نیازی

چترال ( نمایندہ آوازچترال) پاکستان مسلم لیگ ن چترال کےترجمان نیاز اے نیازی ایڈوکیٹ نےکہا ہے ۔ کہ حادثات قدرت کی طرف سے امتحانات ہیں ۔ جس میں بلا امتیاز نسل ورنگ اور سیاست سب کی خدمت کرنی چاہئیے ۔ اور سابق وزیر اعظم چترال نواز 2015شریف اس کی زندہ مثال تھے ۔ کےسیلاب میں انہوں نےچترال کا دورہ کیا ۔ ان کے دکھ درد میں شریک ہوئے ۔ اور چترال کے متاثرین میں دو ارب انیس کروڑ روپےکے امدادی چیک تقسیم کئے ۔ انہوں نے کہا ۔ کہ یہی نہیں بلکہ نواز شریف نے اپنے دور حکومت میں اٹھائیس ارب روپےلواری ٹنل پر خرچ کرکے اسےمکمل کیا ، اور خوداس کا افتتاح کیا ۔ اسی طرح گولین ہائیڈل پاور سٹیشن جو فنڈکے مسائل کی وجہ سست روی کا شکار تھا ، پر بائیس ارب روپے خرچ کرکے مکمل کیا ۔ نیز چترال میں ایندھن کی ضرورت کے پیش نظر چترال شہر دروش میں گیس پلانٹ کی منظوری دی ۔ اور مجموعی طور پر نواز شریف نےا پنے دور حکومت میں ساٹھ ارب روپے کے ترقیاتی منصوبوں کا جال بچھایا لیکن افسوس کا مقام ہے ۔ کہ چترال کے لوگوں خصوصا نوجوانوں کو یہ ترقیاتی کام نظر ہی نہیں آتے ۔ اور بے سرو پا جذباتی تقریروں میں ایسے بہہ گئے ہیں ۔ کہ ان بے تکے تقریروں کو ہی وہ اپنی زندگی کا اثاثہ سمجھتے ہیں ۔ آج خیبر پختونخوا کی حکومت کو دس سال ہونے کو ہیں ۔ کوئی ایک میگا منصوبہ چترال میں نظر نہیں آتا ۔ لیکن اس کے باوجود نوجوان طبقہ ٹرک کی بتی کے پیچھے لگے ہوئے ہیں ۔ جس کیلئے نوحہ ہی کیا جاسکتا ہے ۔ انہوں نے کہا ۔ گو کہ چترال کے سب لوگ احسان فراموش نہیں ہیں ۔ لیکن مسلم لیگ ن کی قیادت یہ کہنے میں حق بجانب ہے ۔ کہ پانچ سالوں میں ساٹھ ارب روپے چترال پر خرچ کرنے کے باوجود اگر یہ لوگ اپنے ہمدرد کی پہچان نہیں رکھتے ۔ تو ان سے آیندہ کیا توقع رکھی جاسکتی ہے۔ ایسے میں اگر وزیر اعظم شہباز شریف سیلاب کا جائزہ لینے اور متاثرین سے ملنے کیلئے چترال کا متوقع دورہ کریں ۔ تو اسے ان کی شفقت ہی قرار دیا جاسکتا ہے ۔ ویسے اگر دیکھا جائے، تو چترال کے لوگوں نے چترال کو میگا پراجیکٹ دینے والی پارٹی مسلم لیگ ن کے ساتھ احسان فراموشی کی حد کردی ہے ۔

Facebook Comments

متعلقہ مواد

Back to top button