تازہ ترین

سرکاری گاڑیاں ملازمین کومالکانہ حقوق پردینے کی پالیسی زیرغور

پشاور(  آوازچترال نیوز) خیبر پختونخوا حکومت نے سرکاری افسران کے زیراستعمال گاڑیاں انہیں مالکانہ حقوق پر فراہم کرنے کی پالیسی پرغورشروع کردیا ۔ ذرائع کے مطابق صوبائی حکومت کی ملکیتی 15ہزار سے زائد گاڑیوں کاڈیٹامرتب کرلیاگیا ہے جس کے دوران یہ بھی معلوم ہوا ہے کہ بعض افسران کے پاس تین اور چار گاڑیاں بھی موجود ہیں تاہم سرکاری ریکارڈ میں انہیں دیگر افسران کے نام سے درج کیا گیا ہے ۔ محکمہ خزانہ ذرائع کے مطابق ان گاڑیوں کی خستہ حالی اور ہر سال نئی گاڑیوں کی مانگ دیکھتے ہوئے یہ فیصلہ کیا گیا ہے کہ یہ گاڑیاں ان افسران کو مالکانہ حقوق پر فراہم کردی جائیں۔ ذرائع کے مطابق اس وقت گاڑیوںکا ریکارڈعہدے کے مطابق رکھا گیاہے اورعہدہ چھوڑنے کے بعد متعلقہ ملازم کو وہ گاڑی بھی چھوڑ دینی ہوتی ہے تاہم نئی پالیسی آنے کے بعد گاڑی کا ریکارڈ ملازم کے نام کے ساتھ منسلک ہوگا اور ہر ملازم اپنی گاڑی کا جواب دہ ہوگا ۔صوبائی حکومت گاڑی خریدنے کے بعد اسے سرکاری ملازمین کو آسان اقساط پر فراہم کریگی ذرائع کے مطابق اس اقدام سے سرکاری گاڑیوں کے استعمال میں بھی احتیاط برتی جائیگی اور ہر سرکاری ملازم کے پاس ایک متعلقہ گاڑی بھی ہوگی جس سے ایک ایک ملازم کے پاس کئی گاڑیوں کی موجودگی کے عمل کو بھی ختم کیا جا سکے گا۔

Facebook Comments

متعلقہ مواد

Back to top button