تازہ ترین

عمران خان نے سوشل میڈیا ٹیم سے ملاقات میں پشاور قیام کی وجہ بتا دی

اسلام آباد (   آوازچترال نیوز ) چئیرمین پی ٹی آئی عمران خان نے سوشل میڈیا ٹیم سے ملاقات میں پشاور قیام کی وجہ بتا دی۔انہوں نے کہا کہ حکومت بنی گالا سیل کرکے مجھے نظر بند کرنا چاہتی ہے۔مجھے نظر بند کرتے تو غیر موجودگی میں عوام کا حوصلہ کم پڑ سکتا تھا۔ حکومت کسی بھی طرح ہماری تحریک ناکام کرنا چاہتی ہے۔آزادی مارچ میں خود میدان میں نہ ہوتا تو کارکنوں میں جوش کم ہو جاتا۔ 2014ء کی غلطیوں کو دہرا نہیں سکتا تھا۔انہوں نے کہا کہ ڈی چوک پہنچ جاتا تو خونی تصادم کا خطرہ بڑھ جاتا۔مارچ ختم کرنے کا مقصد فورسز اور کارکنوں میں تصادم سے بچنا تھا۔ہماری سیاسی تحریک پر امن ہے، حکومت پر تشدد بنانا چاہتی ہے۔عمران خان نے کہا کہ حکومت چاہتی ہے ہم تشدد کی جانب آئیں ہمیں اس سے بچنا ہے۔ سپریم کورٹ کے فیصلے کے بعد قوم کو جلد نئی حکمت عملی سے آگاہ کروں گا۔ کارکنوں سے اپیل کرتا ہوں پرامن رہیں۔ پشاور میں تقریب سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے مزید کہا کہ ملک کے لیے فیصلہ کن وقت ہے ، میڈیا نے 25 مئی کو مشکل وقت میں کوریج کی ، آپ نے جذبے اور دلیری سے کوریج کی ، 30 سال سے جرم کرنے والے آج اوپر آکر بیٹھ گئے ، رانا ثناء اللہ نے ماڈل ٹاون میں 14 افراد کو قتل کرایا ، رانا ثنا اللہ کا پھر بیان آیا ہے میں یہ کروں گا وہ کروں گا۔ سابق وزیر اعظم نے کہا کہ اللہ کسی کو اجازت نہیں دیتا کہ وہ کہے کہ میں نیوٹرل ہوں ، اس جدوجہد کو سیاست نہیں جہاد سمجھیں، 4 ہزار انگریزوں نے ہندوستان پر حکومت کی ، جنرل ڈائر نے جلیانوالہ باغ میں لوگوں پر گولیاں برسائیں ، لوگوں پر گولیاں برسانے کا مقصد خوف پھیلانا تھا ۔ عمران خان نے کہا کہ طاقتور بڑے نہیں چھوٹے چور پکڑتے ہیں جب کہ عدالتیں کمزوروں کو طاقتور کرنے کے لیے بنتی ہیں ، کبھی نہ کبھی تو یہ جنگ لڑنی پڑے گی ، سب سے بزدل ظالم ہوتا ہے ، جو شیلز دہشت گردوں پر استعمال کیے جاتے ہیں وہی مارچ میں استعمال ہوئے ، ان کی کوشش ہے کہ آپ کو ڈرائیں ، ڈرپوک شخص کوئی بڑا کام نہیں کرسکتا ، ہم یہ جنگ ہار گئے تو آپ کے بچوں کو لڑنی پڑے گی ، حق کے راستے پر چلتے ہیں تو بات ذات سے آگے نکل جاتی ہے ، ہم ان لوگوں کو شکست دیں تو پاکستان اوپر چلا جائے گا۔

Facebook Comments

متعلقہ مواد

Back to top button