تازہ ترینکاروبار

فیڈریشن آف پاکستان چیمبرز کی زرمبادلہ کے ذخائر اور مہنگائی کی صورتحال تشویش

اسلام آباد (  آوازچترال) فیڈریشن آف پاکستان چیمبرز نے وزیراعظم کو اپنے خط میں زرمبادلہ کے ذخائر اور مہنگائی کی صورتحال تشویش کا اظہار کیا ہے، انہوں نے مطالبہ کیا کہ ملک میں معاشی ایمرجنسی لگائی جانی چاہیے، غیرضروری اشیاء کی درآمد پر پابندی لگائی جائے۔ دنیا نیوز کے مطابق فیڈریشن آف پاکستان چیمبرز نے  ملک میں زرمبادلہ کے ذخائر اور مہنگائی کی صورتحال تشویشناک ہے، غیرضروری اشیاء کی درآمد پر پابندی لگائی جائے، لاکرز میں رکھے ڈالر کو بینک چینل میں لانے کیلئے حکومت مراعات فراہم کرے۔ دوسری جانب وفاقی وزیر خزانہ مفتاح اسماعیل نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ کوشش کریں گے پٹرولیم مصنوعات کی قیمتیں برقرار رکھیں۔ انہوں نے کہا کہ عمران نیازی کے قول و فعل میں تضاد ہے، سابق حکومت نے ملک کیلئے معاشی مشکلات پیدا کیں۔ کوشش کریں گے پٹرولیم مصنوعات کی قیمتیں برقرار رکھیں۔ وزیر خزانہ مفتاح اسماعیل کا کہنا تھا کہ پوری حکومت چلانیکا ماہانہ خرچہ 45ارب روپے ہے، ڈیزل پر حکومت کو فی لٹر70 روپے نقصان ہو رہا ہے، پٹرول اور ڈیزل کی قیمت بڑھنے پر پیسہ ہماری جیب میں نہیں جاتا۔ حکومت کے پاس پیسے نہ ہونے پر قرض لینا پڑتا ہے، پٹرولیم مصنوعات پر سیلز ٹیکس اور لیوی عائد نہیں کریں گے، پٹرول کی قیمت بڑھے سے عوام کی قوت خرید پر بوجھ پڑتا ہے، پٹرولیم مصنوعات پر سبسڈی دینیکی کوشش کریں گے۔انہوں نے کہا کہ رواں ماہ حکومت کو102ارب روپیکا اضافی بوجھ برداشت کرنا پڑے گا، وزارت خزانہ کے پاس مخصوص رقم ہوتی ہے، حکومت پٹرول پر 30 روپے فی لٹر نقصان برداشت کر رہی ہے، پٹرول کی قیمت بڑھنے سے اشیائے خورونوش کی قیمتوں پر بھی اثرہوتا ہے۔ عمران خان نے آئی ایم ایف سے پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کا معاہدہ کیا، تحریک عدم اعتماد آئی تو پٹرول 149روپے کا کر دیا، عمران خان کے معاہدے کے مطابق پٹرول کی قیمت 245 ہونی چاہیے تھی۔ سابق حکومت نے ملک کیلئے معاشی مشکلات پیدا کیں۔

Facebook Comments

متعلقہ مواد

Back to top button