87

دو وفاقی وزراء کی نااہلی کا فیصلہ ہو چکا

اسلام آباد (  آوازچترال)  الیکشن کمیشن پر عائد کیے جانے والے الزامات کے بعد وفاقی وزرا فواد چودھری اور اعظم سواتی کے سر پر نا اہلی کی تلوار لٹکے لگی ہے۔اسی حوالے سے سینئر صحافی عارف حمید بھٹی نے دعوی کیا ہے کہ وفاقی وزیر فواد چوہدری اور وفاقی وزیر اعظم سواتی کی نااہلی کا فیصلہ ہو چکا ہے۔نجی ٹی وی چینل کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے مزید کہا کہ کہ چیف الیکشن کمشنر نے دونوں کے خلاف فیصلہ کرلیا ہے۔ چیف الیکشن کمشنر نوٹس کی بنیاد پر فواد چوہدری اور اعظم سواتی کو نااہل کر نے کا فیصلہ کر چکے ہیں۔ اور یہ معلومات وزیراعظم عمران خان کو ان کے قریبی ماتحت ادارے نے بھی دی تھیں کہ آپ کا بوریا بستر گول کرنے کی سازشیں پاکستان سے نہیں بیرونی طاقتوں کے اشاروں پر ہو رہی ہے۔ الیکشن کمیشن نے ڈسکہ الیکشن کی رپورٹ بھی پنجاب حکومت کے خلاف لکھ لی ہے۔ اس کے تانے بانے بھی لندن سے بننے جارہے ہیں اور یہی وجہ ہے کہ شہباز شریف بھی متحرک ہو چکے ہیں۔ نجی ٹی وی چینل کے پروگرام میں بات کرتے ہوئے الیکشن کمیشن کے سابق سیکرٹری اور ماہر قانون کنور دلشاد نے کہا کہ وفاقی وزرا فواد چوہدری اور اعظم سواتی کے الیکشن کمیشن کے خلاف الزامات پر نااہلی کی سزا بھی ہو سکتی ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ حکومت اور الیکشن کمیشن کے معاملے میں آئینی بحران پیدا ہو رہا ہے۔ الیکشن کمیشن نے سوچ سمجھ کر قدم اٹھایا ہے۔ انہوں نے کہا کہ وفاقی وزرا کے الیکشن کمیشن پر الزامات کے نتیجے میں ان پر توہین عدالت لگ سکتی ہے اور انہیں نااہلی کی سزا بھی ہو سکتی ہے۔ یاد رہے کہ الیکشن کمیشن پر عائد کیے جانے والے الزامات پر وفاقی وزرا فواد چودھری اور اعظم سواتی کو نوٹسز جاری کیے گئے تھے۔ الیکشن کمیشن نے وفاقی وزرا کے الزامات کی تردید کرتے ہوئے مسترد کر دیئے اور اعظم سواتی سے الزامات کے ثبوت مانگنے کا بھی فیصلہ کیا ۔ الیکشن کمیشن نے پیمرا سے متعلقہ ریکارڈر طلب کیا ہے جب کہ ایوانِ صدر، سینیٹ کمیٹی کی کارروائی اور میڈیا بریفنگ سے متعلق ریکارڈ مرتب کرنے کی بھی ہدایت کی ۔ جبکہ دوسری جانب الیکشن کمیشن کی جانب سے جاری کیے گئے نوٹس پر رد عمل دیتے ہوئے وفاقی وزیر فواد چودھری نے کہا کہ الیکشن کمیشن کا احترام اپنی جگہ لیکن شخصیات کے سیاسی کردار پر بات کرنا پسند نہیں تو اپنا کنڈکٹ غیر سیاسی رکھیں نوٹس آیا تو تفصیلی جواب دیں گے۔

Facebook Comments