166

وزیر اعلی خیبر پختونخوا محمود خان کی زیر صدارت مختلف محکموں کا جائزہ اجلاس

 پشاور  (  آواز چترال)وزیر اعلی خیبر پختونخوا محمود خان کی زیر صدارت مختلف محکموں کا جائزہ اجلاس۔ اجلاس میں صوبائی حکومت کی ٹرانسفر پالیسی پر عملدرآمد، ترقیاتی منصوبوں کے پی سی ونز کی منظوری، خالی آسامیوں پر بھرتیوں پر پیشرفت کی صورتحال کا جائزہ لیا گیا۔ وزیر اعلیٰ کو بریفنگ دیتے ہوئے کہا گیا کہ دو سالوں سے ایک ہی عہدے پر تعینات ملازمین کے تبادلوں کی پالیسی کے تحت محکمہ اسٹیبلشمنٹ نے 437 ملازمین کا تبادلہ کر دیا ہے ، مزید 500 کا تبادلہ ایک ہفتے میں مکمل کیا جائے گا، محکمہ خوراک میں اب تک 72 ملازمین کا تبادلہ کردیا گیا ہے۔ محکمہ جنگلات میں دو سال سے زائد ایک ہی عہدے پر تعینات تمام ملازمین کا تبادلہ کر دیا گیا ہے۔ محکمہ ٹرانسپورٹ میں بھی ایسے تمام ملازمین کے تبادلوں کا عمل مکمل کیا گیا ہے، محکمہ صحت میں ایک ہی عہدے پر دو سالوں سے تعینات ملازمین کا ڈیٹا تیار کیا جا رہا ہے۔ 5 دسمبر تک ایسے تمام ملازمین کے تبادلوں کو سارا عمل مکمل کیا جائے گا، بندوبستی اضلاع میں مختلف گریڈ کے اساتذہ کی ساڑھے سات ہزار آسامیاں مشتہر کردی گئیں ہیں، ضم اضلاع میں اساتذہ کی 3442 اسامیاں مشتہر کردی گئیں ہیں، اساتذہ کی بھرتیوں کا سارا عمل اگلے چار مہینوں میں مکمل کیا جائے گا۔ موجودہ سالانہ ترقیاتی پروگرام میں محکمہ تعلیم کے کل 41 منصوبے شامل ہیں۔ اب تک 21 منصوبوں کے پی سی ونز منظور ہو چکے ہیں باقی منظوری کے مراحل میں ہیں،
صوبہ بھر میں محکمہ صحت کے ایمبولینس سروس کی ریسکیو 1122 کو منتقلی کا عمل اسی مہینے شروع کیا جائے گا۔
بریفنگ میں یہ بھی کہا گیا کہ محکمہ صحت میں بھی ای ٹرانسفر پالیسی متعارف کرنے پر کام جاری ہے، ضم شدہ اضلاع میں بنیادی مراکز صحت اور دیہی مراکز صحت کی تجدیدکاری کا عمل جون 2021 تک مکمل کیا جائے گا، صوبے کے سرکاری ہسپتالوں میں ویسٹ مینجمنٹ کے منصوبے کا پی سی ون منظور ہو گیا ہے، صوبے کے تمام ڈسٹرکٹ ہیڈکوارٹر ہسپتالوں کی تجدیدکاری کے منصوبے کا پی سی ون تیار کر لیا گیا ہے، محکمہ صحت میں تمام فیلگ شپ منصوبوں کے پی سی ونز اسی مہینے مکمل کئے جائیں گے۔ محکمہ خوراک کے تحت تمام ترقیاتی منصوبوں کے پی سی ونز منظور ہو گئے ہیں۔
سالانہ ترقیاتی پروگرام میں شامل محکمہ جنگلات کے تمام منصوبوں کے پی سی ونز منظور ہو چکے ہیں۔ صوبہ بھر میں جنگلات کے تحفظ کے لئے محکمہ جنگلات میں 5428 نگہبان تعینات کئے گئے ہیں، لکڑیوں کی غیر قانونی نقل و حمل کے لئے صوبہ بھر میں نئے فارسٹ چیک پوسٹیں قائم کی جا رہی ہیں۔

وزیر اعلی نے ہدایت دی کہ دو سالوں سے ایک ہی ضلع میں تعینات تمام ڈسٹرکٹ فوڈ کنٹرولرز کا بھی تبادلہ کیا جائے۔ محکمہ تعلیم میں ڈائریکٹوریٹ، ای ڈی او آفسز اور اسکولوں میں دو سالوں سے تعینات تمام کلریکل اسٹاف کا تبادلہ کرکے رپورٹ پیش کی جائے۔ صوبے میں کیڈٹ کالجوں کے قیام کے لئے فیزیبلٹی جلد مکمل کی جائے اور جو کالج فیزیبل ہیں ان پر جلد کام شروع کیا جائے، دیر میں کیڈٹ کالج کے قیام کے لئے موزوں زمین کی نشاندہی کی جائے۔
وزیر اعلی نے ہدایت دی کہ ایمبولینسز کی ریسکیو 1122 کو منتقلی کا سارا عمل اگلے سال مارچ تک مکمل کیا جائے، صحت انصاف کارڈ اسکیم میں جگر کی پیوند کاری کو شامل کیا جائے، صوبے کے لوگوں کو جگر کی پیوند کاری کی سہولت سمیت درکار ادویات کی مفت فراہمی کو یقینی بنایا جائے۔ محکمہ خوراک سستا بازاروں میں آٹے کی وافر مقدار میں دستیابی کو یقینی بنائے، نئے فارسٹ چیک پوسٹوں کا قیام مقررہ وقت میں مکمل کی جائے اور انوائرنمنٹل پروٹیکشن ایجنسی اپنی کار کردگی کو بہتر بنائے۔

Facebook Comments