49

ضلعی انتظامیہ اپر چترال کےزیر نگرانی یوم سیاہ کشمیرمنایا گیا۔

اپر چترال (ذاکر محمد زخمی) مقبوضہ کشمیر میں نہتے کشمیریوں کے ساتھ بھارتی فوج کے جبرو بربریت اور مظالم کےخلاف وزیر اعظم حکومت پاکستان، صوبائی حکومت اور ڈپٹی کمشنر اپر چترال شاہ سعود کے احکامات کی روشنی میں اپر چترال کے ہیڈکوارٹر بونی میں ضلعی انتظامیہ اپر چترال کےزیر نگرانی یوم سیاہ کشمیرمنایا گیا۔ جس میں ڈسٹرکٹ انتظامیہ اپر چترال کے افسران، ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ اپر چترال کے سربراہان، تحصیل میونسپل ایڈمنسٹریٹشن موڑکہو کے TMO,پولیس فورس، چترال لیویز کے جوان، ٹریفک ڈیوٹی پر مامور پولیس اہلکاراں اور مختلف شعبہ جات سے تعلق رکھنے والے لوگوں نے شرکت کیں۔ ریلی سے خطاب میں مقررین نے کشمیر میں نہتے کشمیریوں کے ساتھ بھارتی حکومت اور انڈین افواج کے غاصبانہ اقدام، فسطائی عمل، جبرو بربریت اور مظالم کی شدید الفاظ میں مزمت کیں اور اس جبر کے نتیجے میں شہید ہونے والے نہتے کشمیری بھائیوں اور بہنون کی یاد میں ایک منٹ کی خاموشی کی گئی۔ اس دوران ایک منٹ کے لئے ٹریفک اور نقل و حمل کو روک دیا گیا۔ مقررین نے کہا کہ کشمیر پاکستان کا شہ رگ ہے اوریہ ہمیشہ پاکستان کا حصہ رہے گا۔لہذا ہم اپنے مظلوم کشمیری بھائیوں اور بہنوں کے ساتھ کھڑے ہیں اور کھڑے رہیں گے۔ ریلی کے احتتام پر گورنمنٹ ہائی سکول بونی میں ایک عالیشان پروگرام کا انعقاد کیا گیا۔ جس میں اپر چترال کے محتلف سکولوں سے آئے ہوئے طلباء و طالبات نے تقاریریں پیش کیں۔ انہون نے اپنے تقاریر میں انڈین سامراج کو نہتے کشمیریوں کے ساتھ ظلم کرنے پر سخت ترین الفاظ میں مزمت کیں۔ آخر میں پاکستان ذندہ باد، کشمیر بنے گا پاکستان، مودی سرکار مردہ باد اور ہندوستان مردہ باد کے نعرے کے ساتھ یہ پروگرام اپنے احتتام کو پہنچا۔

Facebook Comments