55

دیانتداری سے بتا رہاہوں طاقتور کیلئے کوئی قانون نظرنہیں آتا،چیف جسٹس اطہر من اللہ کے ماحولیاتی آلودگی سے متعلق کیس میں ریمارکس

اسلام آباد(آوازچترال )ماحولیاتی آلودگی کے خاتمے سے متعلق کیس میں اسلام آبادہائیکورٹ نے قانون پر عملدرآمد کرانے کاحکم دیدیا ،چیف جسٹس اطہر من اللہ نے ریمارکس دیتے ہوئے کہاکہ دیانتداری سے بتا رہاہوں طاقتور کیلئے کوئی قانون نظرنہیں آتا۔ نجی ٹی وی کے مطابق اسلام آبادہائیکورٹ میں شہر میں ماحولیاتی آلودگی کے خاتمے سے متعلق کیس کی سماعت ہوئی،چیف جسٹس اطہر من اللہ نے کیس کی سماعت کی،معاون خصوصی برائے موسمیاتی تبدیلی ملک امین اسلم ،چیئرمین سی ڈی اے عامر احمد علی اور سیکرٹری موسمیاتی تبدیلی عدالت میں پیش ہوئے۔   چیف جسٹس اطہر من اللہ نے استفسار کیاکہ آپ کے ذمہ صرف اسلام آبادکاعلاقہ ہے کیاوہاں بھی قانون پر عمل نہیں ہو سکتا؟کیاماحولیاتی قوانین چھوٹے سے علاقے پر بھی نافذ نہیں ہو سکتے ؟۔ چیف جسٹس اطہر من اللہ نے کہاکہ آنے والی نسلوں کے مستقبل سے کھیلا جارہا ہے،پورانیشنل پارک تباہ ہو گیا،دیانتداری سے بتا رہاہوں طاقتور کیلئے کوئی قانون نظرنہیں آتا۔ اسلام آبادہائیکورٹ نے ماحولیاتی آلودگی کے خاتمے قانون پر عملدرآمد کرانے کاحکم دیدیا،عدالت نے وفاق اورچیئرمین سی ڈی اے سے 3 ہفتے میں رپورٹ طلب کرلی اورتعمیراتی منصوبوں کیلئے ماحولیاتی تحفظ ایجنسی کی منظوری کے قانون پر عمل درآمدیقینی بنانے کاحکم دیدیا۔

Facebook Comments