53

ایس آر ایس پی کی طرف سے ہائیر سیکنڈری سکول شاگرام میں تعمیراتی پراجیکٹ کے حوالے سے خبر کی وضاحت

 چترال( آوازچترال )   گذشتہ دنوں چترال کے مقامی آن لائن اخبارات میں شاگرام میں گورنمنٹ ہائیر سیکنڈری سکول عمارت کی تعمیر کے ایک پراجیکٹ میں مزدوروں اور دکانداروں کے بقایاجات کی ادائیگی کے حوالے سے ایک خبر میں  ایس آر ایس پی کا نام لیا گیا ہے جسکی وضاحت کیلئے یہ پریس ریلیز جاری کی جارہی ہے۔ درحقیقت شاگرام سکول میں اضافی کمروں کی تعمیر کے حوالے سے پراجیکٹ IMCنام کے ایک ادارے کی ہے، اسی ادارے نے مذکورہ سکول میں عمارت کی تعمیر کے لئے ٹینڈر جاری طلب کئے اور انہوں نے ہی ٹھیکیدار کا انتخاب کیا ہے۔نہ یہ پراجیکٹ  ایس آر ایس پی کا ہے اور نہ ہی ٹھیکیدار کے انتخاب میں ایس آر ایس پی کا کوئی کردار ہے۔محکمہ تعلیم کے ہمقدم پراجیکٹ میں ایس آر ایس پی کا کردار بذات خود ایک کنسلٹنٹ کا ہے جس کی ذمہ داری میں متعلقہ عمارت کے لئے ڈیزائن کی تیاری اور کام کی نگرانی کرنا ہے، مزدوروں اور دیگر افراد کے واجبات کی ادائیگی کے حوالے سے بحیثیت کنسلٹنٹ ایس آر ایس پی کا کوئی کردار نہیں۔اسکے باوجود مقامی مزدروں اور دیگر افراد کے مشکلات کے پیش نظر ایس آر ایس پی کے ہیڈ آفس سے آئی ایم سی کو اس بابت مطلع کردیاگیا ہے جس پر اس پراجیکٹ کے کنٹریکٹر نے بتایا کہ ایک مقامی سب کنٹریکٹر نے اس سارے عمل میں دھوکہ دہی کی ہے تاہم اس کے باوجود کنٹریکٹر اس کی ذمہ داری لیتے ہوئے بہت جلد اس مسئلے کو حل کرنے کی یقین دہانی کی ہے۔ اس سارے معاملے میں ایس آر ایس پی کا نام غلط طور پر استعمال کیا گیا ہے جس پر افسوس کا اظہار کرتے ہیں۔ ایس آر ایس پی ایک بار اس امر کی وضاحت کرتا ہے کہ بحیثیت کنسلٹنٹ مزدوروں یا دیگر بقایاجات کی ادائیگی میں ہمارا کوئی کردار نہیں۔

Facebook Comments