149

رہائشی علاقوں سے موبائل ٹاور فوری ہٹانے کے احکامات جاری

پشاور( آوازچترال نیوز)پشاورہائی کورٹ نے رہائشی علاقوں میںموبائل ٹاؤرز انسانی جانوں کو نقصان کے خدشہ پرہٹانے کے احکامات جاری کردیئے ہیں جسٹس قیصررشید نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ مساجداورسکول موبائل ٹاؤرزسے زیادہ اہم ہیں قیمتی جانوں کو نقصان پہنچانے والے ٹائورزپرکوئی سمجھوتہ نہیں ہوگا گزشتہ روز محمدنعیم کی جانب سے نورعالم خان کے توسط سے دائررٹ پٹیشن کی سماعت میں گزشتہ پیشی پرڈی جی ای پی اے ڈاکٹر بشیرنے عدالت کو بتایا تھا کہ پشاورمیں اس وقت 366موبائل ٹاؤرزکاسروے مکمل کیا جاچکا ہے جن میںسے20ٹائور بین الاقوامی معیار کے مطابق نہیںاوریہ ٹائور آبادی سے 25فٹ سے بھی کم فاصلے پر نصب ہیں جبکہ مساجد کے قریب 55 اور سکولوں کے قریب46ٹاؤرزنصب ہیںاسی طرح رہائشی علاقوں میں مجموعی طورپر195موبائل ٹاورز موجودہیںچونکہ 2009سے پہلے موبائل ٹاورکی تنصیب کیلئے این اوسی کی ضرورت نہیں تھی اسلئے زیادہ ترٹاورزاسی وقت لگائے گئے ہیں اوراسکے بعداین اوسی لازمی قراردی گئی ہے فاضل بنچ نے رٹ کی سماعت22فروری تک ملتوی کردی۔

Facebook Comments