97

پولیس آفیسرز موبائل ایپ اور ویب سائٹ استعمال کے پابند

پشاور۔(آوازچترال رپورٹ)صوبائی دارالحکومت پشاور میں پولیس کو جدید ٹیکنالوجی سے روشناس کرانے کیلئے ڈی ایس پیز اور ایس ایچ اوز پرموبائل ایپ و ویب سائٹ کا استعمال لازمی قراردیدیاگیا ہے جس کی ہفتہ وار مانیٹرنگ کی جائیگی جبکہ غفلت کے مرتکب افسران و اہلکاروں کیخلاف سخت کاروائی کرنے کا فیصلہ کیاگیا ہے سی سی پی او پشاور محمد علی گنڈا پور کی ہدایت پر گزشتہ روزملک سعد شہید پولیس لائن میں موبائل ایپ و ویب سائٹ کے استعمال سے متعلق ڈی ایس پیز اور ایس ایچ اوز کی تربیتی ورکشاپ کا انعقاد کیاگیااس موقع پر سی سی پی او پشاور اور ایس ایس پی آپریشن سمیت دیگر حکام بھی شرکت کی ورکشاپ میں ڈی ایس پیز اور ایس ایچ اوز کو ایپ سمیت دیگر جدید ٹیکنالوجی سے متعلق خصوصی تربیت دی گئی۔  جبکہ ان کے موبائل فونز میں ایپ بھی ڈاؤن کی گئی جن کے ذریعے عوامی مسائل کے فوری اور بروقت حل کرنے میں مدد ملے گی، ایپ کی ہفتہ وار مانیٹرنگ کی جائے گی جس پر موصول ہونے والے شکایات کے ازالہ کو ہر صورت یقینی بنایاجائے گااس موقع پر سی سی پی او محمد علی گنڈاپور نے واضح کیا ہے کہ پولیس ایپ سمیت دیگر جدید ٹیکنالوجی سے متعلق تربیت دینے کا مقصد عوام کے مسائل کو ان کی دہلیز پر حل کرنا ہے انہوں نے کہاکہ شہری اپنے موبائل فون میں موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرکے کسی بھی جرم یا حادثہ سمیت ہنگامی صورتحال میں ایک کلک پر پولیس کو آگاہ کرسکتے ہیں۔ یعنی عوام کو اس اپلیکیشن کی مدد سے پولیس کو ایمرجنسی کال، مدد، حادثہ ٗ نزدیکی تھانہ، نیور الرٹ، پولیس کو فیڈ بیک اور فون بک کی سہولت با آسانی حاصل ہے پولیس ایپ کے ذریعے کال یا ایس ایم ایس کرنے والے کی لوکیشن، موبائل نمبر اور موبائل آئی ایم ای آئی نمبر کو بھی ٹریس کرسکتے ہیں اس کے علاوہ جرائم پیشہ اور منشیات فروشوں کی نشاندہی سمیت کسی بھی جرائم یا واردات کی اطلاع دینے کیلئے پولیس ویب سائٹ پر اطلاع دے سکتے ہیں جبکہ اطلاع دینے والے کا نام تک کا پتہ نہیں چلتا اس لئے شہری زیادہ سے زیادہ پولیس ویپ سائٹ اور ایپ سے فائدہ اٹھائیں واضح رہے کہ ویب سائٹ پر جرائم پیشہ ٗ قبضہ مافیا ٗ منشیات فروش ٗ ڈکیت ٗ رہزن ٗ اغواء کار ٗ دہشتگرد اور بچوں کے ساتھ زیادتی سمیت دیگر جرائم میں ملوث افراد کا مکمل ڈیٹا موجود ہے واضح رہے کہ اب تک 7ہزار افراد نے ایپ ڈاؤن کی ہے۔

Facebook Comments