89

بی آرٹی منصوبہ ٗ ہائیکورٹ نے لاگت کی جامع رپورٹ مانگ لی

پشاور۔(آوازچترال رپورٹ) پشاور ہائی کورٹ نے بی آرٹی منصوبے کی لاگت سے متعلق تفصیلی رپورٹ طلب کرلی، کیس کی سماعت کے دوران جسٹس قیصر رشید نے ریمارکس دیئے کہ بی آرٹی منصوبہ مکمل نہ ہونے کیوجہ سے لوگوں کو مشکلات کا سامنا ہے، بی آرٹی گاڑیوں کابھی خیال نہیں کیاجارہا ہے جس سے یہ گاڑیاں خراب ہورہی ہیں، ہائی کورٹ کے جسٹس قیصر رشید اورجسٹس احمد علی پر مشتمل دورکنی بینچ نے بی آرٹی سے متعلق دائررٹ کی سماعت کی، اس موقع پر عیسیٰ خان خلیل ایڈوکیٹ،ایڈیشنل ایڈوکیٹ جنرل سکندر حیات بھی عدالت میں پیش ہوئے۔

 دوران سماعت جسٹس قیصر رشید نے ریمارکس دیئے کہ بی آرٹی بسیں کھڑی کی گئی ہیں لیکن ان کا خیال نہیں کیاجارہا ہے، جس کی وجہ سے یہ بسیں خراب ہورہی ہیں اس موقع پر بس ریپڈ ٹرانزٹ منصوبے کے نمائندے بھی عدالت میں پیش ہوئے، جسٹس قیصر رشید نے ان سے مخاطب ہوتے ہوئے کہا کہ بی آرٹی کب مکمل ہوگی؟ لوگوں کو مشکلات کا سامنا کرناپڑرہا ہے۔

 جس پر بی آرٹی نمائندوں نے بتایا کہ منصوبہ بہت جلد مکمل کرلیا جائے گا جس سے لوگوں کی مشکلات میں کمی آئے گی۔ دو رکنی بینچ نے بی آرٹی حکام کو بی آرٹی کی کل لاگت سے متعلق ریکارڈ طلب کرلیا کہ عدالت کو بتایا جائے کہ پراجیکٹ کی ابتدائی لاگت کتنی تھی اور اب اس کی لاگت کہاں تک پہنچ گئی ہے۔ کیس کی سماعت اگلی پیشی تک کیلئے ملتوی کردی گئی ہے۔

Facebook Comments