132

سانحہ ساہیول! پیارے بچوں یہ قوم آپ سے شرمندہ ہے

اسلام آباد ( آوازچترال نیوز) لاہور کی انسداد دہشت گردی کی خصوصی عدالت نے سانحہ ساہیوال مقدمے میں نامزد تمام 6 ملزمان کو شک کا فائدہ دے کر بری کردیاہے.جب بھی ظلم کی انتہا کی بات آئے گی تو سانحہ ساہیوال لوگوں کے ذہنوں میں ضرور آئے گا۔یہ وہ سانحہ ہے جس میں معصوم بچوں کے سامنے ان کے والدین کو قتل کر دیا گیا تھا،آج ان ملزمان کو شک کی بنیاد پر بری کر دیا گیا ہے جس کا سوشل میڈیا پر سخت ردِعمل دیکھنے میں آرہا ہے۔صارفین نے وزیراعظم عمران خان کا ان کا پرانا بیان یاد دلا دیا ہے۔جس میں عمران خان نے کہا تھا کہ ساہیوال واقعے پر عوام میں پایا جانے والا غم و غصہ بالکل جائز اور قابلِ فہم ہے۔ میں قوم کو یقین دلاتا ہوں کہ قطر سے واپسی پر نہ صرف یہ کہ اس واقعے کے ذمہ داروں کو عبرت ناک سزا دی جائے گی بلکہ میں پنجاب پولیس کے پورے ڈھانچے کا جائزہ لوں گا اور اس کی اصلاح کا آغاز کروں گا۔ ایک صارف نے ٹویٹ کرتے ہوئے کہا کہ میں اب سخت مایوس ہوں۔ ایک صارف نے کہا کہ اس تصویر نے میرا دل توڑ دیا ہے۔ ایک صارف نے تو وزیراعظم عمران خان کو بزدل قرار دے دیا ہے۔ ایک صارف نے اس واقعے کی تصویر کہانی پر ٹویٹ کرتے ہوئے کہا کہ عمران خان ہم یہ واقعہ کبھی نہیں بھولیں گے۔ ایک صارف نے کہا کہ ہاں عمران خان اس ملزمان کو رہا کر کے مثالی سزا دے رہے ہیں۔صارف نے کہا کہ کیا یہ ہے عمران خان کی مدینہ کی ریاست ؟۔ ایک صارف نے کہا کہ پیارے بچوں یہ قوم آپ سے شرمندہ ہے۔ اس کے علاوہ بھی کئی صارفین نے اس حوالے سے غم و غصے کا اظہار کیا۔صارفین کا کہنا ہے کہ اگر ملزمان کو شک کی بنیاد پر بری کیا گیا ہے تو یہ معصوم بچے اپنے والدین کا خون کے ہاتھ پر تلاش کرے۔

Facebook Comments