11

دروش ہسپتال میں مستقل لیڈی ڈاکٹر.آنے تک لامتناہی احتجاج کی کال اپنی جگہ برقرار ہے جو مسئلہ کے حل تک جاری رہیگی

دروش( نمائندہ آوازچترال)ممتاز عالم دین سینئر نائب امیر جمعیت علماء اسلام قاری جمال عبدالناصر نے ایک اخباری بیان میں کہا ہے کہ دروش ہسپتال میں مستقل لیڈی ڈاکٹروں کے آنے تک اسی ہزار آبادی کے خواتین کی تکالیف کے پیش نظر قوم کے عظیم تر مفاد میں ڈی ایچ کیو ہسپتال چترال سے ایک لیڈی ڈاکٹر او پی ڈی کے لئے مقرر کی جائے۔اُنہوں نے کہا کہ ڈی ایچ او چترال لیڈی ڈاکٹر کے آنے جانے لئے گاڑی کا بندوبست کرے تاکہ دروش کے خواتین کے مسائل حل ہو اور سخت مشکلات میں وقتی طور پر کچھ کمی بھی آجائے۔ قاری جمال عبدالناصر نے کہا کہ دروش میں ڈاکٹر نہ ہونے کی بناء پر ڈی ایچ کیو ہسپتال چترال پر رش میں بھی کمی ہو اور غریب خواتین اور ان کے اہل وعیال مالی مشکلات سے بھی دوچار نہ ہوں اہالیان دروش کو اس بات کا مکمل ادراک اور احساس ہے کہ ڈی ایچ کیو ہسپتال چترال میں بھی لیڈی ڈاکٹروں کی کمی ہے لیکن دروش ہسپتال میں لیڈی ڈاکٹر کی سہولت شروع سے ہے ہی نہیں لہذا دروش کے خواتین کے لئے ہمارے ڈاکٹر صاحبان کو بھی انسانی ہمدردی اور قوم کے بہترین مفاد میں وقتی طور پر قربانی دینے کے ضرورت ہوگی اُنہوں نے کہا کہ اللہ پاک ہم سب کو نیکی کی توفیق عطاء فرمائے اور مجبوروں کے لئے دی جانے والی قربانیوں کو اپنی بارگاہ عالیہ میں قبول و منظور فرمائے چونکہ سخت عوامی تکلیف کے پیش نظر عارضی تجویز جو انتہاء مناسب اور آسان بھی ہے حکام کے سامنے پیش کی جاتی ہے اگر اس مناسب تجویز کو بھی پس وہ پر ڈالا گیا تو لامتناہی احتجاج کی کال اپنی جگہ برقرار ہے جو مسئلہ کے حل تک جاری رہیگی۔