60

ایم۔آٸی۔خان سرحدی ایڈوکیٹ …محمد کوثر ایڈوکیٹ

ایم۔آٸی۔خان سرحدی (ایڈوکیٹ) ڈسٹرکٹ بار چترال کے مرنجان مرنج شخصیت کے حامل وکیل ھیں۔علاقہ واشیچ تورکہو کے ایک بڑے گھرانے کے شیرمحمد خان مرحوم کے ھاں 20دسمبر 1958 کو پیدا ھوۓ اور بڑے ھوکر وکالت کے پیشے سے وابستہ ھوگۓ۔
خوش لباس ایسے کہ دنگ رہ جاٸیں اکثر کوٹ اور ٹاٸی کے دلدادہ ھیں۔راست گوٸی انکی گھٹی میں پڑی ھے۔خودداری میں کوٸی انکے مقابل نہیں۔ڈسٹرکٹ بار چترال کے ممبران میں الگ انداز اور باغ و بہار شخصیت کے حامل ھونے کی وجہ سے نمایان ھیں۔جج صاحبان کے ھاں انکو عزت اور مرتبے کی نگاہ سے دیکھا جاتا ھے۔
انکا قبیلہ بقول انکے رنجیت سنگھ کے خاندان سے تعلق رکھتا ھے جسے چترال میں "مو سنگے” کہا جاتا ھے ۔ موھن سنگھ انکا جدامجد تھا یوں چترال وارد ھونے کےبعد اس قبیلے کو موسنگے کہا جانے لگا جو کہ اصل میں "موھن سنگھے”کہا جانا چاھۓ۔

شاید یہی وجہ ھے کہ ایم آٸی خان سرحدی صاحب بندوق سے اتنا نہیں ڈرتے جتنی تلوار اور "کرپال”سےعقیدت رکھتے ھیں۔کہا جاتا ھے کہ کسی زمانے ایوں میں جایداد حوالگی کے لیے بطور اھل کمیشن گٸے تو مدیونان بندوقوں اور پستول سمیت تمام حربوں میں ناکامی کے بعد مجبور ھوکے تلوار لیکر میدان میں نکلے تو معاملہ ادھورا چھوڑ کے وھاں سے "واپس”ھوۓ وہ دن اور آج کا دن ھے کہ وکیل صاحب دروش جانے سے بھی اس لیے کتراتے ھیں کہ راستے میں ایوں کا علاقہ آتا ھے۔
اگر یہ روایت درست ھے تو یقینا فاضل اھل کمیشن کی اس کمزوری کو مخالف وکیل نے مدیون کو بتایا ھوگا۔واللہ اعلم۔
حاضر جوابی اور بزلہ سنجی میں ایم آٸی خان سرحدی صاحب بےمثل ھیں۔ایک پست قد سنٸر وکیل نے ایم۔آٸی۔خان سرحدی صاحب کے گھنے مونچھوں پر طنز کرتے ھوۓ کہا کہ ” اِن مونچھوں کو جھاڑیوں کی طرح لہرانے کا کیا مقصد ھے?” تو ایم آٸی خان صاحب نے برجستہ جواب دیا ” تاکہ ترے جیسے جراثیم میرے ناک میں نہ گھس پاٸیں”۔
سیاسی طور پر عوامی نیشنل پارٹی سے تعلق رکھتے ھیں اور زکواة کے چیرمیں رہ چکے ھیں ۔اپنی دیانتداری اور ایمانداری کی وجہ سے جہاں وکالت میں معتبر ھیں اسی طرح بطور چیرمین زکواة نیک نامی کماٸی۔مقرر ایسے کہ لوگوں میں جوش جذبہ پیدا کرین الفاظ کا چناو اتنا نازک کہ عقل دنگ رہ جاۓ۔
نیشنل پارٹی سے وابستگی کے وجوھات جب میں نے ان سے پوچھا تو کہنے لگا "پختوں کی دوستی اور دشمنی سکھوں کی طرح کھل کر ھوتا ھے دونوں قومیں پیٹھ پیچھے وار نہیں کرتے اور یہ کہ نیشنل پارٹی دیگر پارٹیوں کے برعکس اپنے ورکرز کی عزت اور بھرپور سپورٹ کرتا ھے” واللہ اعلم۔
جونٸرز کی دلجوٸی میں اپنے مثال آپ ھیں بار ایسوایشن کے تمام وکلإ انکو بلاتفریق عزت کے نگاہ سے دیکھتے ھیں اور انکی خود داری اور کسی کے سامنے نہ جھکنے اور نہ بکنے کی مثالیں دیتے ھیں۔

Facebook Comments