10

آصف علی زرداری کا چیئرمین سینیٹ کے خلاف عدم اعتماد کی قرارداد دوبارہ لانے کا اعلان

اسلام آباد ( آوازچترال نیوز) سابق صدر پاکستانآصف علی زرداری نے چیئرمین سینیٹ کے خلاف عدم اعتماد کی قرارداد دوبارہ لانے کا اعلان کر دیا ہے۔ میڈیا سے گفتگو کے دوران سابق صدر سے صحافی نے سوال کیا کہ کیا وہ دوبارہ عدم اعتماد کی تحریک لائیں گے؟ جس کے جواب میں انہوں نے کہا ’’انشاء اللہ انشاء اللہ‘‘۔ آصف زرداری نے کہا کہ چیئرمین کے خلاف دوبارہ قراداد لانے کے لیے تین ماہ کا وقت ہوتا ہے۔ایک دفعہ جنگ نہیں جیت سکے دوبارہ جیت جائیں گے۔ ایک اور سوال کے جواب میں سابق صدر کا کہنا تھا کہ خفیہ ووٹنگ کو ختم کرنے کے لیے رولز میں ضرور ترمیم کریں گے، حکومت انشاء اللہ جائے گی۔ واضح رہے کہ اس سے قبل متحدہ اپوزیشن کی طرف سے لائی گئی عدم اعتماد کی قرارداد کے لیے ووٹ کم پڑگئے تھے اور اپوزیشن کے 14اراکین منحرف ہوگئے تھے۔   اس سے قبل سابق صدر پاکستانآصف علی زرداری نے 1947 میں اپنا گھر بار چھوڑ کر پاکستان آنیوالوں کو طعنے دیتے ہوئے کہا ہے کہ آپ تو بھاگ کر آئے تھے،پاکستان سندھیوں اور بنگالیوں نے بنایا۔ انہوں نے کہا کہ "آپ تو ہجرت کرکے آئے،آپ نے تو پاکستان نہیں بنایا،آپ تو بھاگ کر آئے تھے،پاکستان تو سندھ اوربنگلا دیش نے بنایا”- انہوں نے کہا ہے کہ پاکستان پیپلز پارٹی کی بنیاد ہی کشمیر پر رکھی گئی تھی‘ کشمیریوں اور بھارت میں بسنے والے مسلمانوں کو دو قومی نظریہ کی سمجھ آگئی ہوگی‘ موجودہ صورتحال کا تقاضا تھا کہ متحدہ عرب امارات‘ چین‘ روس اور ایران کا لیڈر شپ دورہ کرتی اور ان سے اس صورتحال پر حمایت حاصل کرتی۔بدھ کو پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس میں مقبوضہ کشمیر کی صورتحال پر جاری بحث میں حصہ لیتے ہوئے آصف علی زرداری نے کہا کہ کشمیر کا موجودہ سانحہ مشرقیپاکستان سے بھی بڑا ہے۔ پیپلز پارٹی کی بنیاد کشمیر پر رکھی گئی تھی۔ذوالفقار علی بھٹو نے مذاکرات کے ذریعے 90 ہزار قیدی واپس لائے‘ آج کشمیر کا آدھا حصہ ٹوٹ چکا ہے۔ کشمیری اوربھارت کے مسلمانوں کو یہ بات سمجھ آگئی ہے کہ قائداعظم کا دو قومی نظریہ کیسا تھا‘ ہمیں دوراندیش سوچ چاہیے۔