شندور میلہ۔۔۔۔تحریر۔محمد کوثر ایڈوکیٹ | Awaz-e-Chitral

Home / تازہ ترین / شندور میلہ۔۔۔۔تحریر۔محمد کوثر ایڈوکیٹ

شندور میلہ۔۔۔۔تحریر۔محمد کوثر ایڈوکیٹ

پولو چترال کا قومی اور روایتی کھیل ھے جبکہ شندور میں قیام پاکستان سے بھی کٸی عشروں سے پہلےکھیلا جاتا رھا ھے مگر بدقسمتی سے گذشتہ کٸی دھاٸیوں سے سرکار نے اسے ہایجیک کرکے سرکاری ٹیم بناکے اس پر تسلط جمایا ھوا ھے۔ گذشتہ چند سالوں سے شندور پولو میلہ میلے کے بجاۓ میدان جنگ کا نقشہ ذیادہ پیش کررھا ھے۔چند سرکاری لوگ اپنے افسروں کے لیے اسے عام آدمی کے لیے تکلیف دہ بنا چکے ھیں۔ پروٹوکول اور سیکیوریٹی کی وجہ سے شندور انڈیا پاکستان کنٹرول لاین کا منظر پیش کررھا ھے۔ ان ” بہادر”افسران بلکہ "شاہان پاکستان” کو اپنی جان کا اتنا خوف ھے تو انہیں چاھۓ کہ اپنے گھروں یا دفتر میں رہنا چاھٸے تاکہ سرکاری خزانے کا ضیاع بھی نہ ھو اور انکی "ھیرے جیسی قیمتی جانیں”بھی محفوظ رھیں۔اپنی عیاشی کے خاطر ھمارے روایات کو پامال کرنے کا حق انہیں کس نے دیا ھے? ظلم یہ ھے کہ پولو ٹیم کو دونوں جانب کے "اعلحضرت” صاحبان یعنی گلگت و غذر اور چترال کے "حضور والاشان دام اقبالہ و اجلالہ عالی مرتبت ھز ھاینس” اے۔بی۔سی۔ڈی ۔ ای ایف جی ایچ کیو اینڈ سو آن” یعنی ڈی ۔سی صاحبان ترتیب دے رھے ھیں جو گھوڑا تو دور کی بات کبھی گدھے پہ سواری کا شرف بھی انہیں حاصل نہیں ھوا ھے۔ پچھلے سال ضلعی اسمبلی نے بھی آیندہ لوکل سطح پر شندور میلہ منعقد کرنے کا "زوردار دھماکہ” کیا تھا مگر ضلعی اسمبلی کی مثال میرے نزدیک "چوھوں کی مجلس” سے کم نہیں۔ھونا یہ چاھۓ کہ ایم این اے اور ایم پی اے کے ماتحت یہ سارے کام ھونی چاھۓ جو عوام کے مزاج سے آشنا ھوتے ھیں۔ پولوایسوسی ایشن والے بھی نرالے لوگ ھیں جو ان "کے۔آٸ۔سی”صاحبان کے سامنے "بزاخفش”کی طرح سرھلاتے رھتے ھیں۔حالانکہ یہ انکی ذمہ داری ھے کہ چترال کے ٹیموں کو ترتیب دیں ۔ سرکاری ٹیموں کو اگر کھیلنے کا شوق ھے تو انہیں دوسرے درجے پہ رکھا جاۓ۔ لگتا ھے امسال بھی شندور میلہ پولیس اور لیویز کے بندوقوں کے ساۓ میں کھیلا جاۓ گا اور "اعلحضرت” صاحبان "ڈیکان ڈیکان سوری پیچھی” "سملتوں”کو تاو دیتے ھوۓ اپنے "ملکاوں”سمیت انجواۓ کرینگے۔خیموں میں "روشٹ”کے مزے اڑاینگے اور اصل حقداران "گھیت میں مڑاغ” پچھواڑوں کو کجھاتے ھوۓ واپس ھونگے۔  مجھے افسوس ان لوگوں پر ھے جو اس "جنگی ماحول”میلے میں شرکت کرنے جاینگے۔۔۔حیف ھے ایسے میلے پ

error: Content is protected !!