یہ ہے ریاست مدینہ جہاں بوڑھی خواتین پر تشدد کیا جاتا ہے | Awaz-e-Chitral

Breaking News

Home / تازہ ترین / یہ ہے ریاست مدینہ جہاں بوڑھی خواتین پر تشدد کیا جاتا ہے

یہ ہے ریاست مدینہ جہاں بوڑھی خواتین پر تشدد کیا جاتا ہے

لاہور ۔ ( آوازچترال رپورٹ )   حکومت کی حکمت عملی بجا اور اس پر اپوزیشن کا احتجاج بھی ٹھیک مگر کسی بھی سیاسی جماعت کو یہ بات نہیں بھولنی چاہیے کہ جب وہ حکومت میں ہوتی ہے تو کچھ اور قانون ہوتے ہیں اور جب وہ اپوزیشن میں تبدیل ہو جاتی ہے تو معاشرے کے قانون بدل دیے جاتے ہیں۔آج ایک کی باری تو کل کسی اور کی بھی باری آتی ہے۔موجودہ حکومت جب اپوزیشن میں تھی تو انہوں نے اسلام آبا دکی سڑکوں پر تاریخ ساز دھرنا دیا تھا مگر اس دوران حکومت نے کسی قسم کے تشدد کی کوشش کی اور نہ ہی لا اینڈ فورسز ایجنسیز کوکوئی حکم نامہ جاری کیامگر آج جب پی ٹی آئی حکومت میں ہے تو کبھی کسی پارٹی پر دہشت گردی کے مقدمے قائم کیے جا رہے ہیں تو کبھی پرامن اپوزیشن کارکنوں پر ڈنڈے برسائے جا رہے ہیں اور کبھی انہیں جیلوں میں ڈالا جا رہا ہے۔ گزشتہ دنوں بھی کچھ ایسا ہی واقعہ اسلام آباد میں نیب عدالت کے باہر دیکھنے کو ملا۔پیپلز پارٹی چیئرمین بلاول بھٹو اور سابق صدر آصف علی زرداری جب نیبعدالت میں پیشی پر آئے تو اظہار یکجہتی کے لیے خواتین و مرد حضرات کی بھی ایک تعداد مو قع پر پہنچی اور انہوں نے عمارت کے اندر داخل ہونے کی کوشش کی۔اس دوران پولیس نے انتباہ جاری کیا مگر کارکن پسپا نہ ہوئے تو پولیس نے واٹر کینن کے استعمال کے بعد لاٹھی چارج کرتے ہوئے خواتین و مرد کارکنوں کی گرفتاری بھی عمل میں لائی۔اس واقعے کے بعد بلاول بھٹو جب جا رہے تھے تو ایک بوڑھی کارکن نے اپنے لیڈر کو روکتے ہوئے اپنی بپتا سنائی کہہ میری عمر دیکھیں مجھے بھی تشدد کا نشانہ بنایا گیا۔ہم اپنے لیڈر سے لنے آئے تھے ہمیں پولیس نے روکا اندر بھی نہیں جانے دیا اور ہم پر تشدد بھی کیاگیا۔کیا یہ ریاست مدینہ ہے جس تبدیلی کے نعرے لگا کر پی ٹی آئی حکومت میں آئی ہے کہ اب خواتین اور خاص کر برزگ خواتین پر بھی تشدد کیا جائے گا۔ اس پر بلاول بھٹو نے بوڑھی خاتون ورکر کو گلے سے لگا کر دلاسہ دیااور کہا کہ ہم ایسی ہی حکومت کے خلاف تو سڑکوں پر آنے کا اعلان کر رہے ہیں یہ ہرگز ریاست مدینہ نہیں ہے۔

error: Content is protected !!