62

پشاور میں پولیو ویکسی نیشن کا ہدف 16لاکھ

پشاور۔(آوازچترال رپورٹ) 22 اپریل سے شروع ہونے والی پولیو مہم میں پشاور میں دس سال تک کے بچوں کو انسدادپولیو کے قطرے پلانے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ عالمی ادارہ صحت کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ پشاور پولیو وائرس کے باعث دنیا کا خطرناک ترین شہر بن چکا ہے اور پشاور کا شمار پولیو وائرس کے لئے انتہائی حساس علاقوں میں ہوتا ہے۔بیان میں والدین سے پرزور اپیل کی ہے کہ اس موذی بیماری سے اپنے بچوں کو بچانے کے لئے پولیو سے بچاؤ کے دو قطرے ضرور پلائیں، جاری بیان کے مطابق پشاور میں دس سال تک کے 16 لاکھ بچوں کوانسداد پولیو قطرے پلانے کا ہدف ہے، بیان کے مطابق پشاور پولیو وائرس کے لئے جنت سے کم نہیں ہے، حکومت پاکستان پولیو وائرس کے خاتمے کے لئے پرعزم ہے پولیو وائرس کی حساسیت کی بنیاد پر پولیو سے بچاؤ کے قطروں کے لئے عمر کی حد پانچ سال سے دس سال کر دی گئی ہے۔پشاور میں پولیو وائرس کی مستقل موجودگی کی بنیاد پر انسداد پولیو قطروں کے لئے بچوں کی عمر میں اضافہ کا فیصلہ کیا گیا ہے، رپورٹ کے مطابق پشاور میں 2017ء سے گٹر کے پانی میں پولیو وائرس مسلسل موجود ہے جس کی وجہ سے بچوں کو پولیو کا خطرہ لاحق ہے۔

Facebook Comments