72

ناشائستہ اور بدزبانی کا کلچر سیاست کو بدبودار بنا رہا ہے ۔احتساب کو سیاست کی بھینٹ نہیں چڑھانا چاہئے ۔افراد نہیں پاکستان اہم ہے ۔ سینیٹر سراج الحق

لاہور(آوازچترال رپورٹ)امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے کہا ہے کہ ناشائستہ اور بدزبانی کا کلچر سیاست کو بدبودار بنا رہا ہے ۔احتساب کو سیاست کی بھینٹ نہیں چڑھانا چاہئے ۔افراد نہیں پاکستان اہم ہے ۔سیاسی جماعتوں کا فرض ہے کہ وہ اپنے اندر سے کرپٹ اور بدیانت لوگوں کو نکال کر خود ہی عدالتوں کے حوالے کردیں ۔الیکشن کمیشن اگر انتخابات سے قبل 62/63پر عمل کرتا تو قوم کو ایک صاف ستھری اور کلین قیادت ملتی۔سیاست اب بھی ظالم جاگیر داروں اور کرپٹ سرمایہ داروں کی گرفت میں ہے ۔احتساب کو مزید موثر بنانے کیلئے حکومت کو بھی اپنی صفوں میں موجود کالی بھیڑوں کونکالنا ہوگا۔احتساب میں لائق اور ڈس لائق کا فارمولانہیں چلتا ۔لوگ میراچور زندہ باد اور آپ کا چور مردہ باد کے نعروں کو پسند نہیں کرتے ۔حیرت ہے کہ اب تک کوئی ریکوری نہیں ہورہی ۔عوام چاہتے ہیں کہ مال مسروقہ برآمد ہواور چوری کی گئی رقم واپس قومی خزانے میں آئے ۔جماعت اسلامی ویلفیئر سوسائٹی کے قیام کیلئے مسجد کو مرکز بنائے گی ۔مسجد معاشرے میں موجود ناداروں ،مسکینوں ،بیواؤں اور یتیموں کی کفالت کے ساتھ ساتھ انصاف کی فراہمی کا بھی مرکز ہوگی۔ا ن خیالات کا اظہار انہوں نے جامع مسجد منصورہ میں جمعہ کے بڑے اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔
سینیٹر سراج الحق نے کہا کہ قوم قرضوں او ر مسائل کی جس دلدل میں پھنسی ہوئی ہے اس سے نکلنے کا واحد راستہ ملک میں اسلامی نظام کا نفاذ ہے ۔قوم لوٹی ہوئی دولت کی ریکوری چاہتی ہے تاکہ اسے مہنگائی اوربے روزگاری سے نجات مل سکے ۔بڑا جھاڑوپھرے گا تو پاکستان کرپشن فری بنے گا۔ پاکستان کو کرپشن فری بنانے کیلئے شروع کی گئی جماعت اسلامی کی تحریک کامیابی سے جاری ہے اور اس وقت تک جاری رہے گی جب تک قومی خزانے کو لوٹ کر دولت باہرمنتقل کرنے والے سلاخوں کے پیچھے نہیں پہنچ جاتے اور چوری کی دولت واپس نہیں مل جاتی ۔انہوں نے کہا کہ حکومت سب کے احتساب کو یقینی بنائے اور حکومتی صفوں اور سرکاری اداروں میں موجود کرپٹ اور بدیانت لوگوں کو احتساب کے اداروں کے حوالے کیا جائے ۔کرپشن کے خاتمہ کیلئے اب سیاسی جماعتوں کو بھی اپنا رویہ تبدیل کرنا اور چھپے ہوئے کرپٹ عناصر کو نکال باہر کرنا ہوگا۔ سیاسی جماعتوں کا فرض ہے کہ وہ کرپشن میں مبتلا خواہ چھوٹا ہو یا بڑا کسی فرد کی حمایت نہ کریں۔اب کرپشن کے ناسور کو جڑوں سے کھینچ کر باہر نکالنا ہوگا تاکہ آئندہ کوئی سیاسی جماعتوں کو ڈھال بنا کر قومی خزانے پر ہاتھ صاف نہ کرسکے ۔

Facebook Comments