66

قادیانی خو د کو غیر مسلم تسلیم کرنے کی بجائے آئین پاکستان کے خلاف سازشوں میں مصروف ہیں ۔ سینیٹر سرا ج الحق

پشاور ( آوازچترال رپورٹ )امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سرا ج الحق نے کہاہے کہ آئین پاکستان میں قادیانیوں سمیت تمام اقلیتوں کے حقوق کا واضح تعین کردیاگیاہے لیکن قادیانی خو د کو غیر مسلم تسلیم کرنے کی بجائے آئین پاکستان کے خلاف سازشوں میں مصروف ہیں ۔ آئین سے غداری کسی صورت برداشت نہیں کی جائے گی ۔ حکومتی وزیر اور مشیر قادیانیوں کی سرپرستی چھوڑ دیں اور آئین کی حفاظت کے حلف کی پاسداری کریں ۔ غلامان مصطفےٰﷺ کسی کو آئین سے کھلواڑ کرنے کی اجازت نہیں دیں گے ۔ دستور قومی وحدت و یکجہتی کی علامت ہے اس کی حفاظت کے لیے کسی قربانی سے دریغ نہیں کریں گے ۔ حکومت کے سو دن پورے ہونے کو ہیں مگر ابھی تک تبدیلی کا دور دور تک کوئی نشان نہیں ۔ ختم نبوتؐ اور ناموس رسالتؐ کے تحفظ کے لیے پوری قوم ایک پیج پر ہے ۔ ان خیالات کااظہار انہوں نے جماعت اسلامی لاہور کے زیراہتمام ایوان اقبال میں خاتم الانبیاء ﷺ کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ کانفرنس سے جماعت اسلامی لاہور کے امیر ذکر اللہ مجاہد ، جسٹس ریٹائرڈ خلیل الرحمن خان ، ڈاکٹر ارباب عالم ، پروفیسر عامر متین اور،اوریا مقبول جان نے بھی خطاب کیا ۔
سینیٹر سراج الحق نے کہاکہ قادیانی اسلام اور آئین پاکستان کے غدار ہیں ان کی خواہش ہے کہ دستور پاکستان سے اسلامی دفعات ، خاص طور پر قادیانیوں کو کافر قرار دینے اور 295 سی جیسی دفعات کا خاتمہ کر کے اسے مکمل سیکولر دستور بنا دیا جائے لیکن قوم ان سازشوں کو مزید برداشت نہیں کرے گی ۔ انہوں نے کہاکہ حکمرانوں کو بھی اپنا قبلہ درست اور قادیانیوں کی سرپرستی چھوڑ کر اپنی آئینی ذمہ داریوں کو پورا کرنا ہوگا ۔ انہوں نے کہاکہ قوم حکمرانوں کی ہر کوتاہی معاف کر سکتی ہے مگر قادیانیوں کے ساتھ حکومتی آفیشلز کا میل ملاپ اور انہیں سر پر بٹھانے کے اقدامات کو کسی صورت برداشت نہیں کیا جائے گا ۔ انہوں نے کہاکہ آئین پاکستان اقلیتوں کے حقوق کی مکمل حفاظت کی ضمانت دیتاہے غیر مسلموں کو اپنے مذہب پرعمل کرنے کی مکمل آزادی ہے ۔ ہم پاکستان میں غیر مسلموں کے خلاف نہیں ، قادیانی خود کو غیر مسلم تسلیم کریں تو ان سے بھی کسی کو کوئی اختلاف نہیں ہوگا ۔ سینیٹر سراج الحق نے کہاکہ حکومت کو یوٹرن لینے اور یوٹرن کے جواز پیدا کرنے کی بجائے رائٹ ٹرن لے کر اپنے وعدوں کی تکمیل کی طرف توجہ دینی چاہیے ۔ حکومت کے سو دن پورے ہونے کو ہیں مگر اب تک اس کے پاس اپنے منشور ، وعدوں اور دعوؤں پر عمل درآمد کے حوالے سے کوئی ایک مثال بھی نہیں ۔ انہوں نے کہاکہ عوام ریلیف چاہتے ہیں ۔ غربت ، مہنگائی ، بے روزگاری اور بدامنی سے نجات چاہتے ہیں ۔ عوام کو دعوؤں اور نعروں سے زیادہ دیر بہلایا نہیں جاسکتا ۔ کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے امیر جماعت اسلامی لاہور ذکر اللہ مجاہد نے کہاکہ خاتم النبیین ﷺ کی ناموس کی حفاظت کے لیے عاشقان مصطفی ﷺ اپنی جانیں نچھاور کرنے کو اپنے لیے سعادت سمجھتے ہیں ۔ ختم نبوت اور ناموس رسالت کی حفاظت کا بہترین طریقہ یہ ہے کہ ملک میں آپ ﷺ کی شریعت کا نفاذ ہو۔

Facebook Comments