54

نئے پاکستان میں پٹرولیم مصنوعات کی قیمتیں؟؟ تحریک انصاف نے خوشخبری سنا دی

اسلام آباد ( آوازچترال رپورٹ)تحریک انصاف کی حکومت بن گئی ہے اور اب پوری قوم وزیر اعظم عمران خان سے بڑے ریلیف کی توقع کر رہی ہے، نئے پاکستان میں ہر شہری امید لگائے بیٹھا ہے کہ پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں سے غیرضروری اضافی ٹیکسز کا خاتمہ کیا جائے گا، اس حوالے سے تحریک انصاف کی حکومت نے بڑی خبر سنا دی ہے۔وزیر پٹرولیم غلام سرور خان کا کہنا ہے کہ پٹرول ڈیزل کی قیمتوں کا جائزہ لیا جائے گا اور ان کی قیمتوں کا تعین عالمی ٹیکسز کو مدنظر رکھتے ہوئے کریں گے۔پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے وفاقی وزیر پٹرولیم غلام سرور خان کا کہنا تھا کہ وزیراعظم عمران خان نے ہر وزارت میں اخراجات کم کرنے کا کہا ہے، میں بھی اپنی وزارت کی کوئی سرکاری گاڑی نہیں لوں گا جب کہ وزارت پٹرولیم اور ماتحت کمپنیوں کے افسران کو بھی غیر ضروری گاڑیاں واپس کرنا ہوں گی۔ کرپشن کے نام سے چڑ ہے، اسے کسی لیول پر برداشت نہیں کی جائے گی۔

غلام سرور خان کا کہنا تھا کہ پٹرول امیر استعمال کرتے ہیں، 2004 سے پہلے ڈیزل سستا اور پٹرول مہنگا تھا، وزارتِ پٹرولیم پٹرول ڈیزل کی قیمتوں کا جائزہ لے گی اور پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں کاتعین عالمی ٹیکسز کو مد نظر رکھ کر کریں گے۔انہوں نے کہا کہ پٹرولیم مصنوعات کی 15 فیصد ملکی پیداوار ہے، کوشش ہو گی کہ پڑولیم مصنوعات کی درآمد کم کی جائے اس حوالے سے پٹرولیم کادرآمدی بل کم کرنے کے لیے تیل وگیس کے مقامی ذخائر کی تلاش تیزکریں گے، خوشخبری ہے کہ پاکستان پیٹرولیم لمیٹڈ (پی پی ایل) نے تیل اورگیس کے نئے ذخائردریافت کیے ہیں۔

وزیرپیٹرولیم نے کہا کہ افغانستان سے تعلقات میں بہتری آ رہی ہے، ترکمانستان، افغانستان اوربھارت سے بات چیت کو فاسٹ ٹریک پر ڈالیں گے، جب کہ ایران پائپ لائن منصوبے کا مسئلہ بات چیت سے حل کرنے کی کوشش کریں گے۔

انہوں نے مزید کہا کہ کوشش ہوگی ایران عالمی عدالت میں نہ جائے اور پہلے ہی مسئلہ حل ہوجائے۔ انہوں نے مزید کہا کہ تاپی منصوبےکی تکمیل کا ہدف 2020 ہے لیکن ہماری کوشش ہے کہ تاپی گیس پائپ لائن منصوبے پرکام تیزکریں اور اسے مقررہ وقت سے پہلے ہی مکمل کرلیں۔

Facebook Comments