46

مولانا عبدالاکبر چترالی نے ٹمبر مافیا کو آڑے ہاتھوں لیا، عوامی مسائل پر زبردست ترجمانی کی

دروش( نامہ نگار) دروش میں منعقد ہونے والے جماعت اسلامی کے شمولیتی جلسے سے خطاب کرتے ہوئے سابق رکن قومی اسمبلی مولانا عبدالاکبر چترالی نے جنگلات کے حوالے سے صوبائی حکومت کے انڈس پالیسی پر کڑی تنقید کرتے ہوئے ٹمبر مافیا کو بھی آڑے ہاتھوں لیا۔ مولانا عبدالاکبر چترالی نے کہا کہ چترال کے غریب لوگوں کو اپنے گھروں کی تعمیر کیلئے ، مساجد اور مدارس کی تعمیر کے لئے پچاس فٹ تک لکڑی نہیں مل رہی مگر با اثر ٹمبر مافیا دھڑادھڑ جنگلات کی بیخ کنی میں مصروف ہے ۔ انہوں نے اس ضمن میں قانونی کاروائی کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ کرپشن میں ملوث افراد کو گرفت میں لایا جائے۔ مولانا عبدالاکبر چترالی نے کہا کہ عمارتی لکڑی کے پرمٹ ہولڈرز کو لکڑی کے نقل وحمل کی اجازت نہیں دیجارہی ہے اور بہانہ بنایا جارہا ہے کہ فوج نے پابندی لگائی لہذا صوبائی حکومت اور کور کمانڈر پشاور سمیت دیگر اعلیٰ عسکری حکام سے مطالبہ کرتے ہیں کہ اس پابندی کو اٹھایا جائے۔ مولانا عبدالاکبر نے دیگر عوامی مسائل کا ذکر کرتے ہوئے کہا ارندو روڈ پر کام بند پڑا ہے حالانکہ یہ ایک انتہائی اہم نوعیت کی سڑک ہے اور فوری طور پر اس سڑک پر کام کو دوبارہ شروع کیا جائے۔ سابق رکن قومی اسمبلی نے کہا کہ گولین گول بجلی گھر سے چترال کے تمام دیہات کو بجلی دیجائے اور جن جن علاقوں میں ابتک بجلی کے کھمبے نصب نہیں ہیں وہاں پر کھمبوں کی تنصیب شروع کئے جائیں، چترال کو بجلی فراہم کئے بغیر کسی دوسرے علاقے کو بجلی لیجانے کی اجازت نہیں دی جاسکتی۔ انہوں نے شیشی کوہ روڈ کی تعمیر میں محکمہ سی اینڈ ڈبلیو کی بے حسی پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے مطالبہ کیا کہ اس سڑک کی تعمیر کا کام جلد از جلد شروع کیا جائے۔ مولاناعبدالاکبر چترالی کی طرف سے عوامی مسائل پر گرمجوشی سے اظہار خیال پر پنڈال میں موجود لوگوں نے زبردست تالیاں بجا کر اور ہاتھ بلند کرتے ہوئے ان مطالبات کی بھرپور تائید کی۔

Facebook Comments

اپنا تبصرہ بھیجیں