58

چترال میں گذشتہ دنوں رونما ہونے والے واقعے کی وجہ سے گرفتار افراد پر لگائے گئے دفعہ واپس لیا جائے ۔

چترال ( آوازنیوز ) ضلع ناظم چترال مغفرت شاہ نے صوبائی حکومت سے مطالبہ کیا ہے ۔ کہ چترال میں گذشتہ دنوں رونما ہونے والے واقعے کی وجہ سے گرفتار افراد پر لگائے گئے دفعہ (اے ٹی اے )واپس لیا جائے ۔ اور چترال کے عوام میں پائی جانے والی تشویش کو ختم کرنے کی کو شش کی جائے ۔ انہوں نے کہا کہ ایسے حالات میں جبکہ چترال کے 22افراد ڈی آئی خان کی جیل میں قید ہیں ۔ چترال میں پولو ٹورنامنٹ کا انعقاد کسی بھی طور مناسب نہیں ۔ اس لئے ٹورنامنٹ کو موخر کیا جائے ۔ چترال بازار مسجد میں ایک اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے ضلع ناظم نے کہا ۔ کہ واقعے میں گرفتار افراد 22افراد ڈی آئی خان جیل میں انتہائی مشکل میں ہیں ۔ اور جن گرفتار افراد کی چترال میں رہائی ہوئی اُن کو بھی بد ترین تشدد کا نشانہ بنایا گیا ۔ ضلع ناظم نے کہا ۔ کہ گذشتہ روز ڈی آئی خان میں قید افراد کی ضمانت کی امید کی جارہی تھی ۔ اس لئے پولو ٹورنامنٹ کو اُن کی رہائی کے بعد منعقد کرنے کی بات کی گئی تھی ۔ لیکن قید افراد کی ضمانت نہ ہو سکی ، جس کی توقع کی جارہی تھی ۔ اس لئے ڈپٹی کمشنر چترال ، کمانڈنٹ چترال سکاؤٹس ، ڈی پی او ر صدر پولو ایسوسی ایشن سے یہ توقع رکھتے ہیں ، کہ وہ حالات کی نزاکت کے پیش نظر پولو ٹورنامنٹ ملتوی کریں گے ۔ لیکن اگر ایسا نہیں کیا جاتا۔ تو وہ لوکل گورنمنٹ کی طرف سے حاصل اختیارات کے تحت یہ ٹورنامنٹ غیر معینہ مدت تک ملتوی کرنے کا اعلان کرتے ہیں ، ضلع ناظم نے تمام عوام سے اپیل کی ہے ۔ کہ وہ بدھ کے روز بازار مسجد چترال میں جمع ہو جائیں ۔ جہاں اس حوالے سے عوام سے مشاورت کی جائے گی ۔ اور اُن کے فیصلے کے مطابق مطابق آیندہ کا لائحہ عمل طے کیا جائے گا ۔ اس سلسلے میں تمام مساجد تک اطلاع پہنچانے کیلئے اجلاس میں حاضر افراد کو ذمہ داری دی گئی ۔ بازار مسجد اجلاس میں ضلع نائب ناظم مولانا عبدالشکور بھی موجود تھے ۔

Facebook Comments

اپنا تبصرہ بھیجیں